سعودی عرب کے قومی دن پر دِلی مبارکباد

Spread the love


محمد وسیم ، ریسرچ اسکالر، اردو
جامعہ ملیہ اسلامیہ ، نئی دہلی

سعودی عرب کا آج 89 واں قومی دن ہے ، ہر سال 23 ستمبر کو یہ دن بڑے جوش و خروش سے منایا جاتا ہے ، آج ہی کے دن بڑی سرتوڑ کوششوں کے بعد حجاز و نجد کی مملکتوں کو شامل کرکے اس کا نام "المملکتہ العربیہ السعودیہ” رکھا گیا تھا ، اس مملکت کی بنیاد خالص کتاب و سنت پر رکھی گئی ہے ، یہی وجہ ہے کہ سعودی عرب کوئی پارلیمنٹ نہیں ہے ، جو بھی فیصلے ہوتے ہیں وہ کتاب و سنت پر مبنی ہوتے ہیں ، آج سعودی عرب میں 89 واں قومی دن منایا جارہا ہے ، جس میں تمام اسلامی شعائر کا بھی خیال رکھا جاتا ہے ، ہمارے یہاں کی طرح نہیں کہ خوشی کے موقع پر غیر اسلامی اور انسانی فطرت کے خلاف کام انجام دےء جاتے ہوں ، سعودی عرب کے فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز یہ عہد کئے ہوئے ہیں کہ سعودی عرب میں دہشت گردی کے لئے کوئی جگہ نہیں ہے ، دہشت گردی امن کے لئے سب سے بڑا خطرہ ہے ، دہشت گردی کرنے والوں کو کیفرِ کردار تک پہونچا کر ہی دم لیں گے ، اسی عزم کا نتیجہ ہے کہ جہاں تمام ممالک میں امن و شانتی غارت ہے تو وہیں سعودی عرب میں امن و سکون کی فضا قائم ہے۔
سعودی عرب دنیا کے نقشے پر ایک ایسا اسلامی ملک ہے جو انسانی مدد میں سب سے آگے ہے ، سعودی عرب نے ہمیشہ ظلم کے خلاف آواز اٹھائی ہے ، یہی وجہ ہے کہ یہ ملک عالمِ اسلام کے دلوں میں بستا ہے ، اس ملک کی سرزمین پر مکّہ و مدینہ جیسی دنیا کی سب سے مقدس جگہیں پائی جاتی ہیں جن سے ہر مسلمان کو دلی و جذباتی لگاؤ ہے ، ایک بار بھی جو سعودی عرب جاتا ہے تو وہاں کی سہولیات ، حکومت کی طرف سے بہتر انتظامات اور انسانیت کی بھلائی کے لئے کئے گئے کاموں کا دیوانہ ہوجاتا ہے ، دنیا کے مختلف ممالک کے عوام کا اپنی حکومت کے خلاف غم و غصہ پایا جاتا ہے جس کی خبر اخبارات میں بھی چھپتی رہتی ہے لیکن سعودی عرب کے عوام اپنی حکومت سے بے پناہ محبت کرتے ہیں ، اس کے ایک حکم پر عمل پیرا ہوجاتے ہیں ، یہ سعودی حکومت کی کامیابی ہی کی دلیل ہے۔
اقوامِ متحدہ میں 2016 کے اجلاس میں سعودی عرب کی طرف سے یہ بیان دیا گیا تھا کہ سعودی حکومت نے 25 لاکھ شامی مسلمان بھائیوں کو مستقل پناہ دی ہے ، اسی طرح سے مہاجرین کے لئے سعودی حکومت نے 7.5 ملین ڈالر دینے کا بھی اعلان کیا تھا ، 2017 میں اقوامِ متحدہ کے اجلاس میں سعودی عرب نے روہنگیائی مسلمانوں کو بنیادی حقوق دلانے کے لئے آواز اٹھانے کا فیصلہ کیا تھا ، اسی طرح سے رپورٹ کے مطابق سعودی عرب نے 3 لاکھ روہنگیائی مسلمانوں کو مستقل پناہ دی ہے اور کئی لاکھ روہنگیائی مسلمان وہاں قیام پذیر ہیں ، ایسے بہت سے فلاحی کام ہیں جو پوری دنیا اور خاص کر عالمِ اسلام کے لئے سعودی عرب کی طرف سے انجام دےء جاتے ہیں ، 2016 میں اقوامِ متحدہ کی ایک رپورٹ آئی تهی جس میں سعودی عرب کو پوری دنیا میں انسانیت کی خدمت کرنے اور امن و سکون کا حامل ملک قرار دیا گیا تھا، سعودی عرب کا Vision 2030 بڑی اہمیت کا حامل ہے، اس منصوبے سے سعودی عرب ترقی کی نئی منزلوں طے کرے گا۔
آخر میں ہم ہندوستانی مسلمانوں کی طرف سے سعودی عرب کے اس پرمسرت ، عظیم اور تاریخی قومی دن کے موقع پر سعودی عرب کے فرماں روا شاہ سلمان بن عبد العزیز ، ولی عہد اور وزیر دفاع محمد بن سلمان ، وزیر خارجہ عادل الجبیر ، ہندوستان میں سعودی عرب کے سفیر ڈاکٹر سعود بن محمد الساطی حفظہم اللہ اور سعودی عرب کی عوام کو دل کی گہرائیوں سے مبارکباد پیش کرتے ہیں- اور دعا کرتے ہیں کہ اللہ تعالیٰ مملکتِ توحید سعودی عرب کو دشمنوں کی شرارتوں سے محفوظ رکھے- وہاں امن و سکون کی فضا قائم رہے- سعودی عرب کے فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد محمد بن سلمان حفظہم اللہ کو اسلام کی مزید خدمت کرنے کی توفیق عطا فرمائے…آمین۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے