چند جملے رشتوں کے نام

Spread the love


رشتے بڑے نازک ہوتے ہیں، کوشش کیجئے کہ اس میں تلخیاں آئیں ہی نہ، لیکن اگر آ بھی جائیں تو کوشش کیجئے کہ تلخیاں ختم ہوں رشتے نہیں، اگر کوششوں کے باوجود بھی تلخیاں ختم ہونے کا نام نہیں لیتیں تو آپ اپنی طرف سے صلہ رحمی کیجئے، یاد رہے کہ قطع تعلقی ایک ناپسندیدہ عمل ہے، آپ صلہ رحمی سے کام لیجئے، بقیہ رشتے دار آپ کے ساتھ کیا کرتے ہیں کیا نہیں اس کو انہیں پہ چھوڑ دیجئے _
رشتے رشتے ہوتے ہیں، ان کے بغیر زندگی بوجھل اور ادھوری ہوتی ہے، جو خوشی رشتوں کو سنبھالنے میں ہے وہ توڑنے میں بالکل نہیں، رشتے اپنے ہوتے ہیں، انہیں اجنبیت کا لباس کبھی بھی پہنانا نہیں چاہیئے، اصل خوشی رشتوں کو نبھانے ہی میں ہے _
.بہکاوے میں یا غصے میں لئے گئے فیصلے عمر بھر کے لئے پچھتاوے کا سبب بن جاتے ہیں _
غلط فہمیاں کہاں نہیں ہوتیں ہیں، ہمیشہ غلط فہمی ہی دور کی جانی چاہیئے، رشتے نہیں _
انسان جب دنیا میں جنم لیتا ہے، تو خود بخود رشتوں کی ایک مضبوط کڑی میں بندھ جاتا ہے، ماں باپ، بھائی بہن، دیگر جملہ واقارب، ہر ایک اس سے مربوط ہوتے ہیں، اور انسان کو ہمیشہ اسی میں بندھا رہنا چاہیئے، انسان جب اپنوں سے گھرا رہتا ہے تو بڑی سے بڑی مصیبتیں اس کے لئے ہلکی ہوسکتیں ہیں _
اکثر لوگ شادی کے بعد بیوی کے علاوہ دیگر رشتوں کو بوجھ سمجھنے لگتے ہیں، بالکل نہیں، دیگر رشتے بوجھ نہیں ہوتے ہیں، ان کی بھی اپنی جگہ پہ ایک اہمیت ہوتی ہے، وہ ماں جو درد زہ کی مصیبتوں کو سہتی ہے، وہ باپ جو انگلی پکڑ کے چلنا سکھاتا ہے، وہ بھائی جس کے ساتھ بچپن کے حسین لمحے گزرتے ہیں، وہ لوگ بوجھ کیسے ہوسکتے ہیں، ایک بیٹے کو ہمیشہ یاد رکھنی چاہیئے، اس کی زندگی میں صرف دو ہی لوگ ایسے ہوتے ہیں جو اس سے بے لوث محبت کرتے ہیں، اور بدلے میں محبت کی صرف ایک ہلکی سے جھلک چاہتے ہیں اور وہ ماں باپ ہی ہوتے ہیں _
کسی بھی آدمی کے لئے باپ ہی اس پوری کائنات میں ایک ایسا شخص ہوتا ہے جو اس بات کی خواہش رکھتا ہے کہ اس کا بیٹا اس سے اونچا مقام حاصل کرے، پوری دنیا ترقی سے جل سکتی ہے، مگر دنیا میں باپ ہی وہ شخص ہوتا ہے جو چاہتا ہے اسے اس کے نام سے نہیں بلکہ بیٹے کے نام سے جانا جائے، جب وہ چلے تو لوگ یہ نہ کہیں کہ فلاں جا رہا ہے، بلکہ یہ کہیں کہ فلاں کا باپ جا رہا ہے، پھر ایسے بے لوث لوگ بوجھ کیسے ہوسکتے ہیں _
یاد رکھئیے، زندگی میں ہمیشہ رشتے ہی کام آتے ہیں، غیر تو صرف تماشا دیکھنے والے ہوتے ہیں، یہی وجہ ہے کہ احادیث میں صلہ رحمی کی بہت ہی اہمیت و فضیلیت بیان کی گئی، یہاں تک کہ ایک حدیث میں بیان کیا گیا ہے کہ صلہ رحمی رزق میں کشادگی کا سبب ہے _
ایک بات یہ بھی ہے کہ زندگی بہت مختصر ہے، اس مختصر سے وقت کو اگر اپنوں کے ساتھ ہنس کھیل کے ہی بتایا جائے تو بہتر ہے، کوشش یہ کی جائے کہ زندگی کا ہر پل ان کے ساتھ خوش گواری کے ساتھ گزرے، تاکہ وہ لوگ جانے کے بعد ہمیشہ اپنی دعاؤں میں یاد رکھیں _

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے